کچھ باتیں میک اپ کی

عورت اور میک اپ ایک دو سر ے کے لیے لازم و ملزوم ہیں۔ خو اتین کا میک اپ کے بغیر گزارہ نہیں اور میک اپ کی تباہ کاریوں کے لیے خو اتین کے چہرے پر بڑھ کرکچھ بھی نہیں۔ خو اتین میک اپ کے ساتھ خو د کو خو بصورت اور با اعتماد سمجھتے ہو ئے میک اپ کا بے دریغ استعمال کر تی ہیں۔ میک اپ کا استعمال اس وقت سے ہو رہا ہے جب ابھی میک اپ کو مکمل آگا ہی حاصل نہیں تھی۔وقت گزرنے کے ساتھ میک اپ کی اشیا ء میں جد ت آئی اور ان کی تعداد میں بھی اضا فہ ہو ا۔
کبھی آپ نے سو چا ہے کہ یہ سرخ رنگ آپ ہو نٹوں پر لگاتی ہیں اس میں کو ن سے اجز اء شامل ہیں۔ یقینا آپ اس حقیقت سے ناواقف ہیں۔
ہر بل کا سمیٹک
ہربل کا سمیٹک کی اصطلا ح سے مر اد کاسمیٹک ہے۔جس میں جڑی بو ٹیا ں اور پورے اجز ا ء بطور بنیادی اشیا ء کے استعمال کئے گئے ہیں۔ اس میں پودوں کے نچوڑ کے علاوہ دیگر قدرتی اجز ا ء شامل ہو تے ہیں۔ ان قدرتی اجز ا ء میں شہد، تیل، قیمتی مو تی اور دھاتیں شامل ہیں ان کو بنانے کا طریقہ کار آیوروید ک میں درج ہے۔
دوسری طر ف آرگینک اشیاء جس میں جڑی بو ٹیا ں اور قدرتی اجز ا ء شامل ہو تے ہیں۔ ان میں ایسے اجزاء نہیں ہو تے جو جلد کو خر اب کر تے ہیں۔ جیسے کیمیکل، انسیلٹائڈ وغیر ہ۔
قدرتی میک اپ
قدرتی کاسمیٹک میں ایسا کیا ہے۔ جب سے پودوں کے جزئیات نا ن ٹاکسک ہو ئے ہیں۔ تو یہ آپ کی جلد کے لیے بہتر ہو گئے ہیں۔
قدرتی اشیاء سے بننے والے کاسمیٹک سٹم میں ٹا کسن بننے کا باعث نہیں بنتے۔جبکہ کیمیکل اجزاء یہ کام کر تے ہیں۔
جب میک اپ قدرتی اجز اء سے بنایا جائے تو یہ متحرک طریقے سے کام کر تے ہیں۔ متحرک اجزاء وہ ہو تے ہیں جو جلد پر اثر ات مر تب کر تے ہیں۔قدرتی میک اپ میں بیسز شامل ہو تی ہیں جو بطور والیم استعمال ہو تی ہیں۔ جیسے گلاب کاعرق،منر ل واٹر، بادام اور تلو ں کا تیل،کلونجی کا تیل اور ایلو ویر ا جیل وغیر ہ شامل ہیں۔
چند میک اپ برانڈ جو قدرتی اجزاء سے میک اپ فر اہم کر تے ہیں۔
بر ٹ بیس
یہ ۴۸۹۱میں قائم ہو ئی یہ پہاڑوں سے بے کار چیزیں لے کر پیکیجنگ کے لیے استعمال کر تے ہیں۔
پر اڈا
ریسائیکل سے متعلق پر اڈابیو ٹی اپنی خو شبو ؤں کے معا ملے میں ڈسکاؤنٹ دیتا ہے۔اگر آپ ان کو خالی بو تلیں واپس کر تے ہیں تو یہ آپ کو بو تل بھر کر دے گا۔
دا بو ٹی شاپ
یہ دکان قدرتی اجز اء کا حامل میک اپ خریدنے کے بارے میں مشہور ہے۔
ایو یڈا
یہ آرگینگ اجزاء کو اپنی مصنو عات میں استعمال کر تے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں