پیر ا سٹا مو ل کے نقصانا ت ۔۔۔ تحقیق

پیر ا سٹا مو ل کا ہمارے ملک میں استعمال اتنا بڑھ گیا ہے کہ ہر دو سر ا شخص چھوٹی سی چھوٹی اور بڑ ی سے بڑ ی بیماری کے لیے پیراسٹامول کااستعمال کر رہا ہے۔ کسی کے سر میں درد ہے تو پیر ا سٹا مو ل ، بخار ہو یا جسم دردیا سر درد ہر بیماری کے لیے پیراسٹامو ل کا انتخاب کیا جاتا ہے۔ لیکن اب لندن میں سائنسدانو ں کی ہو نے والی نئی تحقیق میں انکشاف کیا ہے کہ کمر اور جوڑوں کے درد کے لیے پیر ا سٹا مو ل کا استعمال جگر میں خر ابی پیدا کر تا ہے۔
بر طانو ے جر یدے ’’ بر ٹش میڈیکل جر نل ‘‘ میں شا ئع ہو نے والی تحقیق کے مطا بق کمر کا درد انسانوں میں معذوری کا بڑا سبب ہے اور ایک اندازے کے مطا بق یہ صر ف برطانیہ میں ہر سال ڈھائی کر و ڑ سے زائد افر اد اس دو ائی کی وجہ سے متا ثر ہو رہے ہیں۔ تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ معا لجین ہر بیماری کے لیے خا ص طور پر جوڑوں اور کمر درد کے لیے پیر ا سٹا مو ل تجو یز کر تے ہیں۔ لیکن حقیقت میں یہ دو ا ان مر یضو ں کے لیے افا قے کا با عث نہیں بنتی بلکہ اگر پیر ا سٹا مو ل کو جوڑوں اور کمر کے درد کے لیے استعمال کیا جائے تو یہ جگر کے مسائل کا باعث بنتی ہے۔
ما ہر ین کا کہنا ہے کہ یہ ہرمرض کے لیے مؤثرنہیں ہے۔ اس لیے موجود ہ درد دور کرنے والی دو اؤں کے مقابلے میں جسمانی ورزش جو ڑوں اور کمر کے درد سے بچاؤ کا مؤ ثر علا ج ہے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں