نو جو انوں میں فالج کی شرح میں اضافہ۔۔۔ماہر ین

لا ہو ر (وقت نیوز) نوجوانوں میں فالج کے حملے میں تیز ی سے اضا فہ ہو رہا ہے۔ ایسا ان میں کو لیسٹرول میں اضا فے کی وجہ سے ہورہا ہے۔امریکی یو نیورسٹی کی تحقیق کے مطابق غیر صحت مند طر ز زندگی کے با عث نو جو انوں میں ذیابیطس، کو لیسٹرول اور مو ٹا پے کی شرح میں تیز ی سے اضا فہ ہو تا جا رہا ہے۔جس کی وجہ سے نوجوانوں میں فالج تیزی سے بڑھ رہا ہے۔
تحقیق کے مطابق فا لج کے حملوں کی اوسط عمر کم ہو کر پچپن سال ہو گئی ہے۔خو اتین کے مقابلے میں مر د وں میں فالج کی بیماری زیادہ پا ئی جاتی ہے۔تمباکو نو شی،مو ٹا پا اور ہائی بلڈ پریشر نے اس شرح میں اضا فہ کیا ہے۔
محقیقین کا کہنا ہے کہ ہسپتالوں کے نیورولوجی ڈیپارٹمنٹ کے ریکارڈ کے مطابق گزشتہ دس سال سے بھی کم عر صے میں پانچ سے چو الیس سال کی عمر کے افر اد میں ا سٹروک یا فا لج کے امر اض میں اضافہ ہو ا۔ ان کے مطابق فالج کے مر یضوں میں ہائی بلڈ پریشر، شو گر اور مو ٹاپے کی مشتر کہ علامات پائی گئی ہیں۔
بر طانیہ کی ا سٹروک ایسو یشن سے وابستہ ڈاکٹر لورنا لیورڈ کا کہنا ہے کہ فالج عام طور پر عمر رسیدہ افراد میں ہو تا ہے۔ لیکن کام کر نے والے ایک چو تھائی افراد میں اس کا اثر زیادہ ہو تا ہے۔ اس کے مطابق بر طانیہ میں ہر چار سو بچے اس مرض میں مبتلا ہو تے ہیں۔
نو جوانوں میں اس کی شرح میں خطرناک حد تک اضا فہ ہو ا ہے ماہرین کا کہنا ہے کہ نوجوانوں کو اپنا طر ز زندگی بدلنے کی ضرور ت ہے۔ چودہ سال کے بچوں میں ایشمک فالج، دماغ میں خو ن رک جانے کا سبب ہو نے والا فالج اکتیس فیصد تک بڑھ گیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں