فٹ رہنے کی نئی با تیں

ایک تحقیق سے یہ با ت سامنے آئی ہے کہ کہ پیٹ بھر کا کھا نا کھا نے کے بعد اگر کیو ی پھل کھا لیا جا ئے تو پیٹ پھو لنے کا خد شہ نہیں ہو تا
تحقیق سے یہ بھی با ت سامنے آئی ہے کہ روغنی غذائیں کھا نے کے بعد کیو ی کھا نے سے نہ صر ف ہا ضمہ بہتر ہو جاتا ہے بلکہ شکم سیر ی کی وجہ سے پیٹ میں گیس بننے کا اندیشہ بھی کم ہو جا تا ہے۔
کیو ی پھل میں ایک ایسا جز و پا یا جا تا ہے جو سر خ گو شت ، دو دھ سے بنی ہو ئی مصنو عا ت اور مچھلی میں پا ئی جا نے والی پر و ٹین کو ہضم کرنے میں مدد دیتا ہے ۔تحقیق کے مطا بق جن افر اد کا نظا م ہضم کمزور ہو انھیں یہ پھل کھا نا چا ہیے ۔ خا ص کر بڑی عمر کے افراد کے لیے یہ بہت مفید ہے۔
کیو ی کھانے کے بعد معد ے اور آنتو ں میں کھا نا ہضم کر نے والی رطو بتیں زیادہ مقد ار میں خارج ہو نے لگتی ہے۔ جس کی وجہ سے آنتوں میں پر ٹین کے جذ ب ہو نے کی رفتا ر تیز ہو جاتی ہے ۔ اس طر ح ہضم کے نظا م پر اچھا اثر پڑتا ہے اور روغنی غذ ا با آسانی ہضم ہو جاتی ہے۔ کیو ی میں حیا تین سی بھی پا ئی جا تی ہے جو جسم کے مدافعتی نظام کو فعا ل رکھتی ہے۔
خطر نا ک بیماریو ں سے بچا نے والی سر نج
تحقیق کے مطا بق جو سر نجیں استعمال کی جا تی ہیں ۔ ان میں زیادہ تر استعمال شد ہ ہو تی ہیں۔ جو خطر نا ک بیمار یو ں کا سبب بنتی ہیں۔
بر طانیہ میں ایسی خا ص قسم کی سر نج بنائی گئیں ہیں جھنیں اے بی سی کہتے ہیں۔ ان سر نجو ں کو بنا نے کا مقصد استعمال شد ہ سر نجو ں کیدوبا رہ استعمال کر روکنا ہے ان سر نجو ں میں ایسی سر خ روشنائی ڈالی گئی ہے جو کا ربن ڈائی اکسا ئیڈ سے متا ثر ہو تی ہے ۔ جب یہ سر نجیں غیر شد ہ ہو تی ہیں ان کے اندر کے خانے شفا ف ہو تے ہیں ۔ لیکن جب یہ استعمال کر لی جاتی ہیں تو سر خ ہو جاتی ہیں ۔ اس سے پتہ چلتا ہے کہ یہ سر نجیں استعمال شد ہ ہیں۔
ان سر نجو ں کے استعمال سے خطر ناک بیمار یو ں پر قا بو پا یا جا سکتا ہے۔
اپنے دل کی حفا ظت کر یں
اگر آپ کی عمر کم ہے اور آپ کی آنکھو ں کے گر د جھر یا ں نمو دار ہو گئی ہیں، جلد بے رونق ہو گئی ہے ، چہرے پر تھکن اور سستی کے آثار نما یا ں رہنے لگے ہیں تو اس کا مطلب ہے کہ آپ کا دل خطر ے میں ہے ۔ یہ علا متیں دل کی بیماری کی ہیں۔ آپ کی آنکھو ں کے پپو ٹو ں پر بننے والے با ریک دانے آپ کے جسم کی مضر صحت چکنائی کی سطح میں اضا فہ کی نشا نی ہے ۔یہ چکنا ئی دل کے لیے مضر ہے ۔اور یہ دل کے دورے کی علا مت ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں