ذہنی دباؤ آپ کے لیے خطر ناک ہو سکتا ہے

آج کل کے دور میں ہر شخص ذہنی دباؤ کا شکارہے اور ہردوسرا شخص ذہنی طورپرپریشان نظر آتا ہے۔ چھو ٹی چھو ٹی باتوں پر پر یشان ہو کرہاتھ پاؤ ں چھو ڑ دینا مسئلے کا حل نہیں ہے بلکہ مسئلے کا حل ان پر یشانیو ں اور دباؤ سے نکل کر خو د کو پر سکو ن رکھنا ہے۔ کام کی زیادتی اور ذہنی الجھنیں ہمیں مختلف بیماریو ں میں مبتلا کر تی ہیں۔ذہنی دباؤ کی وجہ سے آپ زندگی کا اصل لطف نہیں اٹھا سکتے۔
دباؤ کو بر داشت نہ کر یں بلکہ اسے کسی نہ کسی طر یقے سے اپنے اندر سے باہر نکالیں کیو نکہ دباؤ آپ کے لیے نقصان دہ ہو سکتا ہے۔
ذہنی دبا ؤ کی وجہ سے آپ مختلف بیماریو ں کا شکا ر ہو نے لگتے ہیں جو آپ کی صحت اور جسمانی تندرستی کے لیے نقصان کا با عث بنتی ہے۔ اس لیے جہا ں تک ممکن ہو خو د کو ذہنی دباؤ سے محفو ظ رکھیں۔
اپنی پسند کا کھانا کھائیں اور اپنی فیو ریٹ آئسکر یم لیں۔
سیڑ ھیا ں چڑھنے سے آپ کی سانسوں کی آمد رفت تیز ہو گی اور آپ زیادہ آکسیجن کو جذب کر یں گے۔ زیادہ آکسیجن جذ ب کر نے سے آپ کے جسمانی اعضاء فعال ہو ں گے اور جسم کے مضر اثر ات رکھنے والے اثر ات کم ہو ں گے۔
اردگر د کی بکھری چیزیں سمیٹنے اور ماحول کوصاف ستھرارکھنے سے بھی ذہنی سکون ملتا ہے۔
دہی کھانے سے ذہنی دباؤ سے چھٹکا را ملتا ہے۔
اگرآپ کو spa ہے تو تیس منٹ کا مساج کر یں۔
دو دھ
نیم گر م دو دھ پینے سے اچھی نیند آتی ہے کیو نکہ اس میں امینو ایسڈ ، ٹر پیٹو فین ہو تا ہے جو جسم اور دما غ پر غنو دگی طاری کرتاہے۔ اس کا کیلشیم دماغ کوٹرپٹوفین استعمال کرنے میں مدد دیتا ہے۔
شہد
نیم گر م دو دھ میں ایک چمچ ہر بل شہد ملا کر پی لیں۔ یہ دماغ سے اوریکسن نکالتا ہے جو کہ نیر و ٹر انسمیٹر ہو تا ہے اور الر ٹ رکھتا ہے۔ شہد دما غ کو آرام پہنچاتا ہے۔
کیلا
وہ پھل جس میں کیلو ریز ہو ں دراصل سلپینگ پلز کا کام کر تے ہیں۔ ان میں میلوٹوئین ہوتی ہے۔ اس کا میگز یم پٹھوں کو سکو ن دیتا ہے۔رات سو نے سے نو ے منٹ پہلے کھانا کھا لیں۔دو سو سے زیادہ کیلو ریز نہ لیں تا کہ نظام ہا ضمہ پر زور نہ پڑے ۔کیو نکہ پیٹ زیادہ بھرا ہو نے کی وجہ سے نیند نہیں آتی۔
ہنسیں
دباؤ کو کم کر نے کا سب سے آسان طر یقہ زور سے ہنسنا ہے۔ اس طرح دماغ کے جوخو شی کے پٹھے ہو تے ہیں وہ حر کت میں آجاتےہیں۔
زیادہ ہنسنے سے دل کی دھڑکن نارمل رہتی ہے۔
بلڈ پر یشر کم ہو تا ہے اور ایسپٹا ئیٹ کو بڑھاتا ہے۔
پھیپھڑوں کو ٹھیک طر ح سانس لینے میں مدد دیتا ہے۔

کیٹاگری میں : صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں