خطاطی کریں ذہنی تناؤ سے دور رہیں۔۔۔۔ ما ہرین

لندن: خطاطی کا فن تمام تہذیبوں اور معاشروں میں یکساں اہمیت کا حامل ہے۔ لیکن اب ماہرین نے تحقیق کی ہے کہ خطاطی کرنے والے افر اد ذہنی تناؤ سے دور رہتے ہیں۔
یو نیو رسٹی آف لندن (یو سی ایل) نے اس ضمن میں پچاس ہز ار افر اد کا سروے کیا اور ان سے معلوم ہو ا کہ خطاطی کی مشق کر نے والے دوسرے لوگوں کے مقابلے میں کم ذہنی تناؤ کا شکار ہو تے ہیں۔
ماہرین کاکہنا ہے کہ خو ش خطی کا عمل تو جہ کے انتشار سے روکتا ہے اور دماغ بھٹکتا نہیں۔ دوسری جانب ۹۶ فیصد افر اد نے خطاطی کو مر اقبے جیسا قر ار دیا۔
اس ضمن میں بر طانیہ کے مشہور خطاط کر سٹن بیکر نے کہا ہے کہ قلم گھماؤ، دباؤ اور ہاتھوں کی حرکات اور تو جہ آپ کو اطر اف کے معا ملات سے بالکل الگ تھلگ کر دیتی ہیں۔ یہ ایک پر سکو ن اور تسکین پہنچانے والا عمل ہے۔ بیکر کے مطابق ان کے پاس خطاطی سیکھنے والے افراد نے غم بھلا کر خو د کو پر سکون پا یا۔
ما ہر ین کا کہنا ہے کہ تحقیق کا کام ہمارے جذ بات اور احساسات کو بھی لگام ڈالتا ہے۔
اس سے قبل تائیو ان کے ما ہر ین بتا چکے ہیں کہ چین میں خطاطی کو بطور تھر اپی استعمال کیا جا تا ہے۔ جس سے مریض ڈیپریشن سے دور ہو تے ہیں اور شیزوفرینیا جیسے امر اض سے بھی بچ سکتے ہیں۔ صر ف چین میں خطاطی سیکھنے والے افر اد میں بیس فیصد اضا فہ ہو ا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں