بچوں کے بھاری بیگ ان کی صحت پر بھاری۔۔۔ ماہرین

برطانیہ کی ایک وفاہی تنظیم نے حال ہی میں ایک رپورٹ پیش کی ہے۔جس میں بچوں کے بھاری بستوں کی طر ف اشارہ کیا گیا ہے۔ اس رپورٹ میں بچوں کے بھاری اور وزنی بستوں کو ان کی صحت کے لیے مضر قر ار دیا ہے۔ ماہرین کا کہناہے کہ بچوں کے وزنی بیگ ان کی پیٹھ اور کمر کو ایسے نقائص کا شکار کر دیتا ہے جس کے بعد ٹھیک ہو نا ناممکن ہو جاتا ہے۔ بچوں کی کمر اور پیٹھ درد کی شکایت چو دہ سال کی عمر سے شروع ہو تی ہے جس سے ریڑھ کی ہڈی کا ٹیڑھا پن سب سے زیادہ دیکھنے میں آیا ہے۔
ماہرین کا کہنا ہے کہ بچوں کے بیگ کم از کم بارہ کلو کے ہو تے ہیں۔ ”ُ بیک کئیر“تنظیم کے ماہرین سین میک ڈوگل نے کہا ہے کہ کم عمری میں اگر بچے کمر درد کی شکایت کر نے لگیں تو یہ شکایت ساری عمر ساتھ چلتی ہے۔
ماہرین کا کہنا ہے کہ اساتذہ کو چاہیے کہ بچوں کو صرف وہ کتب ا سکو ل لانے کے لیے کہیں جس کی ضرورت ہو تی ہے باقی کتب یا تو گھر پر رکھی جائیں یاا سکو ل ڈیسک میں محفو ظ کی جائیں تا کہ بچوں کو بھاری بیگز اٹھانے سے دور رکھا جا ئے اور وہ کمر درد اور کندھو ں کے درد سے محفو ظ رہ سکیں۔ بچوں کی اچھی صحت کے لیے اساتذہ کے تعاون کی ضرورت ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں