بارہ مہینے بچے کے لیے اہم

بچوں کے ابتدائی بارہ مہینے انتہائی اہم ہو تے ہیں۔اس دوران بچہ بہت سی باتیں سیکھتا ہے وہ اپنے پیروں اور ہاتھوں سے کھیلنا شروع کر دیتا ہے۔ پانچ ماہ کی عمر میں وہ کھلو نے پکڑنے لگتا ہے۔بعض بچے رینگنے لگتے ہیں۔ نفسیاتی ماہرین کے مطابق بچوں کے لیے یہ لمحات نہایت مفید ہیں اور ان کی نشوونما میں اہم کر دار ادا کر تے ہیں۔
نو مو لود کا عمو ماً وزن سات پاؤنڈ(ایک ہفتے میں) اور قد بیس انچ ہو تا ہے۔ اس میں کمی بیشی ہو سکتی ہے۔آپ کا بچہ ابتدائی دنوں میں وزن بڑھا بھی سکتا ہے اورکم بھی کر سکتا ہے۔بچے کا ابتدائی ایک ماہ سو تے اور دودھ پیتے گزرتا ہے۔ اس دوران بچہ ابھی ماحول سمجھ نہیں پا رہا ہو تا۔دو ماہ کا بچہ چلانا، رونا، پہچاننا سیکھ لیتا ہے۔ اس ماہ بچے کا وزن نو پاؤنڈ ہوتا ہے۔اس ماہ بچے کی گروتھ تیزی سے ہو تی ہے۔
تین ماہ کا بچہ ہنسنا، قہقہہ لگانا اور باتوں کے جو اب دینا سیکھ لیتا ہے۔ کھلونوں کو اپنی انگلیوں اور پوروں سے ٹچ کر نے لگتا ہے۔ اپنے ہاتھ منہ میں ڈالنا اور پاؤں کے ساتھ کھیلنے لگتا ہے۔ بچہ پشت کے بل پلٹنے لگتا ہے۔
چار ماہ کا بچہ چلانا، اونچی آواز میں ہنسنا اور شور مچانے لگتا ہے۔ بچے کی نیند کم ہوجاتی ہے۔اس کی سو نے کی روٹین میں فرق آجاتا ہے وہ زیادہ جاگتا اور کم سو تا ہے۔ دودھ زیادہ پینے لگتا ہے۔ اچھلنا اور پیروں پر وزن ڈالنے لگتا ہے۔
پانچو یں ماہ میں بچے کی پہچاننے کی حس تیز ہو جاتی ہے۔ سہارے کے ساتھ بیٹھنے لگتا ہے۔اجنبیوں کے ساتھ بے چینی محسو س کر تا ہے۔ نیند مز ید کم ہو جاتی ہے۔ چیزوں کو ہاتھ میں پکڑنے لگتا ہے۔ کچھ بچے رینگنے کی کو شش کر نے لگتے ہیں۔ نظمو ں کے ساتھ لطف اندوز ہو نے لگتا ہے۔ اسے اپنے نام کی پہچان ہو جاتی ہے۔ اس ماہ سے بچہ سو لڈ کھانے کی تیاری شروع کر دیتا ہے۔
چھ ماہ کے بچے کا مطلب آدھا سال مکمل ہو ناہے۔ بچے سہارے کے بغیر بیٹھنے لگتے ہیں۔ واکر پر بیٹھنے لگتا ہے۔ مکمل ٹھو س غذ ا لینے لگتا ہے۔ اسے ذائقہ کی پہچان ہو جاتی ہے۔
سات ماہ کا بچہ سہارے سے کھڑا ہو نے لگتا ہے۔بچہ تیز ی سے بڑھ رہا ہو تا ہے۔ اب آپ بچے کو پھل اور سبزیوں کے علاوہ گو شت، مچھلی،مرغی، ٹفو، چیز وغیرہ دے سکتے ہیں۔
بچوں کے لیے یہ ماہ سیکھنے کا ہو تا ہے۔ وہ نیا کر نا چاہتے ہیں وہ ماما اور بابا کہنے لگتے ہیں۔ کچھ بچے دانت نکالنے لگتے ہیں۔ بچوں کا وزن اور قد تیزی سے بڑھتا ہے۔بچہ اپنی غذا خو د کھانے کی کو شش کر نے لگتا ہے۔ چمچ کو خود سے پکڑنے کی کو شش کر تا ہے۔ اس عمر میں بچہ لہجوں کو سمجھنے لگتا ہے۔
نو ماہ میں بچہ چھو ٹے لفظ بو لنے لگتاہے۔ چیزوں کو پکڑ کر چلنے لگتا ہے۔ اس کا ذہن تیزی سے بڑھتا ہے۔ بچے کے کھانے کی مقدار کو بڑھا دیں۔ بچے کے دو سے تین دانت نکل چکے ہو تے ہیں۔
دس ماہ میں بچہ چیزوں کو تو ڑنے لگتا ہے۔ ضد کر نے لگتا ہے۔
سیڑھیا ں چڑھنے لگتا ہے۔ اس عمر میں اگر بچوں کو پوٹی ٹرین کیا جائے تو بچے سمجھنے لگتے ہیں۔ بچوں کو بھو ک زیادہ لگتی ہے۔ اس لیے ان کے کھانے پینے کا خا ص خیال رکھیں۔
بچے کا سال ختم ہو نے میں صر ف ایک ماہ باقی ہے۔ بچہ بہت سی چیزوں کو سیکھ چکا ہے۔ اب وہ خود سے بغیر سہارے کے قدم اٹھانے کی کو شش کر تا ہے۔ روز روز نئی شرارتوں کو سیکھتا ہے۔
اب آپ کا بچہ سیکھنے کے مراحل میں مکمل آچکا ہے۔جو آپ سکھائیں گے بچہ وہی سیکھے گا۔ بچہ ایک دن میں کم از کم پانچ لفظوں کی پہچان سیکھتا ہے۔ بچے کا قد اور وزن بڑھ چکا ہے۔بچہ نت نئے ذائقو ں سے لطف ہو ناچا ہتا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں