اسٹنگ ۔۔۔ بو تل کے نا م پر زہر

حال ہی میں پنجاب فو ڈ اتھارٹی کے انکشاف پرا سٹنگ بنانے والی ایک فیکٹر ی میں سے جعلی انر جی ڈرنک پکڑ لیے گئے۔ بو تلیں لے کر تلف کر لی گئیں اور ان فیکٹر یو ں کو سیل کر دیا گیا جو اس زہر کو بنانے میں مصروف تھے۔
ہمارے نو جو ان کچھ عر صے سے اسٹنگ بو تل کے اتنے شا ئق ہو گئے تھے کہ انھوں نے ا س کا استعمال نشے کی طر ح کر نا شروع کر دیا۔ مارکیٹ میں اس کی مانگ بڑ ھنے سے لوگوں نے نا جا ئز فا ئدہ اٹھاتے ہو ئے نو جو ان نسل کو زہردینا شروع کردیا ۔جس سے بد قسمتی سے کئی نوجوان مہلک بیماریو ں میں مبتلا ہو ئے اور کچھ کو مو ت کا منہ دیکھنا پڑا۔
کیلیفورنیا یو نیو رسٹی کی ایک تحقیق کے مطا بق جو افر اد اس مشروب کا استعمال کر رہے تھے ان کے نظا م میں توڑپھو ڑ کی واضح صور ت حال سا منے آئی جس کی وجہ سے وہ ہڈیو ں کے گلنے کی بیماری میں مبتلا ہو تے پائے گئے۔
اس کے علاوہ شو گر کے امر اض میں مبتلا ہو نے والوں کو اس مصنو عی ڈرنک نے ذہنی طور پر بھی مفلو ج کر دیاما ہر ین کا کہنا ہے کہ ان ڈرنکس کی وجہ سے بہت سے بچے کینسر اور ٹی بی جیسے مہلک امر اض میں مبتلا پائے گئے۔فاسفورس ایسڈ کی مقدار زیادہ ہو نے کی وجہ سے ہڈیا ں گلنے لگتی ہیں۔ اس کے علاوہ معدے کے امر اض میں مبتلا ہو نے والے افر اد میں بھی خطر ناک حد تک اضا فہ دیکھا گیا۔ما ہر ین نے سختی سے اس ڈرنک سے منع کر تے ہو ئے کہا ہے کہ یہ مو ت کی طر ف بڑھتا وہ زہر ہے جو آپ کو حقیقت میں مفلو ج کردیتا ہے۔ اس لیے ا سٹنگ کے استعمال پر سختی سے تنبیہ کر تے ہو ئے اس کی مارکیٹ پر بھی پا بندی لگا دی گئی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں