آلودگی میں سانس لینا سگریٹ پینے کے متر ادف۔۔ ماہرین

نیو یارک: آلو دہ ہو ا میں سانس لینے کے نقصانات آئے دن سامنے آتے رہتے ہیں۔ لیکن اب ماہرین نے انکشاف کیا ہے کہ اگر طویل عر صے تک آلو دگی میں سانس لیا جا ئے تو اس کامطلب ہے کہ آپ نے بیس سگریٹ پیئے ہیں۔
ان سب سے خطرناک اوزون فضائی آلو دگی ہے جو پھیپھڑوں کو شدید متاثر کر تی ہے۔جس کی تباہی کے نئے ثبو ت یونیورسٹی آف واشنگٹن، کو لمبیا یو نیو رسٹی اور یو نیورسٹی آف بفلیو کے ماہرین نے پیش کیے ہیں۔
واضح رہے کہ گاڑیوں کا دھو ا ں، فیکٹریوں کا زہریلااخر اج اور دیگر فضائی آلو دگی سے اوزون کی آلو دگی جنم لیتی ہے جو ہماری نجلی فضا میں تیرتی رہتی ہے۔ اگر طویل عر صے تک اس میں سانس لیا جائے تو یہ عمل پھیپھڑوں کی نازک بافتوں کے لیے نقصان دہ ہو تا ہے۔ دھیرے دھیرے یہ کیفیت ایمفسما میں تبدیل ہو جاتا ہے اور مریض کھانسی کے بعد سانس لینے میں دقت محسو س کر تا ہے اور قبل از وقت مو ت کا سبب بنتا ہے۔
ماہرین کاکہنا ہے کہ ہم خو د حیران ہیں کہ یہ آلو دگی سگریٹ کے دھو ئیں جتنی نقصان دہ ہے اور تمباکو نو شی کی طر ح پھیپھڑوں کو متاثر کر تی ہے۔
ماہرین نے تشو یش کا اظہار کر تے ہو ئے کہا ہے کہ فضا میں دس سے پچیس حصے فی ارب تک آلودگی میں اضا فہ ہو رہا ہے۔ جس سے سانس کے مسائل پیدا ہو رہے ہیں۔ماہرین کا کہنا ہے کہ ایک ر پورٹ میں پندرہ ہز ار سے زائد افر اد کے سی ٹی اسکین لیے گئے جن میں سے وہ تمام افر اد پھیپھڑو ں کے مرض میں مبتلا نکلے جو فضائی آلو دگی میں سانس لے رہے ہیں۔
ماہرین نے کہا ہے کہ اس سلسلے میں حکو مت کو مدد کے لیے آگے بڑھنے کی ضرورت ہے تاکہ فضائی آلودگی کو کم کر کے آنے والی نسلوں کو اس مرض سے بچایاجا سکے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں